تناؤ کم کرنے کے لیے جاپانی قاصد نے چینی حکومت کو خط پہنچا دیا

بیجنگ: چین نے کہا کہ ایک جاپانی اہلکار نے جمعے کو چینی حکومت کو ایک خط پہنچایا، جس کا مقصد تعلقات پر توجہ دینا ہے جو جزیرہ جاتی لڑی کے حالیہ تنازع پر تلخ ہو گئے ہیں۔

جنوبی بحر چین میں واقع جزائر، جن پر دونوں ممالک کا دعوائے ملکیت ہے اور جنہیں چین میں دیاؤ یو اور جاپان میں سین کاکو کہا جاتا ہے، سے متعلق واقعات کے ایک سلسلے کے بعد دونوں پڑوسیوں میں تناؤ بڑھ گیا تھا۔

وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ جاپان کے سینئر نائب وزیر خارجہ تسویوشی یاماگوچی نے چینی صدر ہُو جِنتاؤ کے لیے خط باضابطہ طور پر پیش کیا، اسٹیٹ کونسلر دائی بینگوؤ کے ساتھ بات چیت کی۔

اس نے مزید کوئی تفصیلات نہیں دیں۔

جاپان کے وزیر خارجہ کوچیرو گیمبا نے منگل کو اپنے ملک کے وزیر اعظم کی جانب سے خط بھیجنے کے ارادے کا اعلان کیا تھا۔

انہوں نے خط کے مندرجات واضح کرنے سے انکار کیا، تاہم کہا کہ جزیروں کے تنازع پر مجروح ہونے والے تعلقات کو بحال کرنے کا یہ اچھا موقع ہے۔

اگست میں تعلقات بدتر ہو گئے تھے جب بیجنگ نواز ایکٹوسٹ متنازع جزائر میں سے ایک پر اتر آئے، جو جاپان کے قبضے میں ہے۔

آپ کومنٹ میں اپنی رائے دے سکتے ہیں ۔