عدالت کا اوئی ایٹمی بجلی گھر دوبارہ چلانے کے خلاف فیصلہ

ٹوکیو: ایک جاپانی عدالت نے بدھ کو ایک ایٹمی بجلی گھر کے دوبارہ چلانے کے خلاف فیصلہ دیا ہے، یہ بات پلانٹ آپریٹر نے بدھ کو بتائی۔ ایک نایاب مقدمے میں 209 ایٹمی بجلی مخالف مدعیوں نے ری ایکٹر بند کرنے کے خلاف یہ فیصلہ حاصل کرنے میں کامیابی پائی۔

صوبہ فوکوئی میں عدالت نے کانسائی الیکٹرک پاور کو، کو اوئی ایٹمی پلانٹ کے ری ایکٹر نمبر 3 اور 4 دوبارہ چلانے کی اجازت کے خلاف فیصلہ دیا، یہ بات یوٹیلیٹی نے ایک بیان میں بتائی۔ کمپنی نے مزید کہا کہ وہ فیصلے کے خلاف اپیل کرے گی۔

اوئی جاپان کے دیگر ایٹمی بجلی گھروں کی طرح 2011 میں فوکوشیما ڈائچی ایٹمی بجلی گھر کے حادثے کے بعد حفاظتی جانچ پڑتال کے لیے معطل کر دیا گیا تھا۔ تب سے جانچ پڑتال کا منتظر ہے۔

عدالت کا فیصلہ دوبارہ چلنے کے منتظر ری ایکٹروں کے لیے اغلباً ایک اور رکاوٹ ثابت ہو گا۔ ان کی حفاظتی جانچ پڑتال پہلے ہی کاغذی کاروائی اور نئی رہنما ہدایات کی تشریح پر تنازعات کی وجہ سے التواء کا شکار ہو رہی ہے۔

آپ کومنٹ میں اپنی رائے دے سکتے ہیں ۔